یہ پینتیس کلو ورنہ کبھی کم نہیں ہوتے۔۔۔کیٹو ڈائٹ سے وزن کم کرنے والے شوبز ستارے

بڑھتے وزن سے پریشان صرف شوبز ستارے ہی نہیں بلکہ ایک عام آدمی بھی ہوتا ہے لیکن فرق صرف یہ ہے کہ وہ باقاعدگی سے کسی ایک ڈائٹ پر قائم نہیں رہ پاتا لیکن شوبز ستارے کوئی بھی ڈائٹ آزمانے کے قائل ہوتے ہیں۔۔۔کچھ ایسی زبردست ٹرانسفارمینشنز ہیں جنہوں نے کبھی کبھار چپکے سے اپنا راز بتا ہی دیا کہ وہ خود کو پتلا کرنے کے لئے کیا کر رہے تھے۔۔۔۔ احمد علی بٹاداکار احمد علی بٹ کو اچانک ہی احساس ہوا کہ یہ جو وزن بڑھنے کی وجہ سے ان کو اس عمر میں ہیرو کی جگہ صرف ہیرو کے بھائی یا چچا کا کردار مل رہا ہے، وہ اس کے لئے تو نہیں بنے۔۔۔ انہیں اپنی صلاحیتوں کا دشمن اپنا وزن محسوس ہونے لگا اور پھر انہوں نے اپنے نفس سے جنگ کرنے کا فیصلہ کیا۔۔۔یوں تو وہ اکثر بتاتے ہیں کہ ان کی بیگم فاطمہ ان کی ڈائٹ کا کتنا خیال رکھتی تھیں لیکن ساتھ ہی ایک راز یہ بھی پتہ چلا ہے کہ انہوں نے بھی کچھ عرصہ زندگی میں کیٹو ڈائٹ کو شامل کیا۔۔۔ تاکہ ٹرانسفارمیشن میں تیزی لا سکیں۔۔۔قریب پینتیس کلو کاٹنے میں کیٹو کا بھی ہاتھ ہے

 سعدیہ امام اداکارہ سعدیہ امام نے اپنی بیٹی کی پیدائش کے بعد جب واپس انڈسٹری میں قدم رکھا تھا تو اکثر لوگ ان کے بڑھتے وزن کو دیکھ کر چونک گئے۔۔۔ خود سعدیہ نے بھی اپنی اس حالت کو دیکھ کر یہ فیصلہ کیا کہ وہ اپنے لئے کچھ کریں گی۔۔۔انہوں نے اپنے وزن سے کچھ اس طرح لڑائی کی کہ ایک عرصہ تک مختلف قسم کی ڈائٹ کیں جن میں سے ایک کیٹو ڈائٹ بھی ہے۔۔۔ ان کا کیٹو کا کھانا گھر پر آتا تھا اور وہ اس کے علاوہ کچھ بھی نہیں کھاتی تھیں۔۔۔ساتھ ہی ایکسرسائز بھی کرتی تھیں۔

 فیصل قریشی فیصل قریشی تو ان ستاروں میں سے ہیں جو آسمان پر چمکنے کے لئے خود پر ہر لمحہ محنت کرتے ہیں۔۔۔ ایسا ہی ہوا جب فیصل نے خود کو کم کرنے کے لئے مختلف ڈائٹ کیں تو ان میں سے ایک کیٹو بھی تھی۔۔۔ یہ اور بات ہے کہ کیٹو نے فیصل قریشی کی زندگی پر کچھ اچھا اثر نہیں ڈالا تھا اور انہیں اس کا بہت عرصہ تک کا استعمال پریشانی میں ہی ڈال گیا تھا۔۔۔

 صنم جنگاداکارہ صنم جنگ نے ایک زمانے میں وزن کو لے کر لوگوں کی بہت باتیں سنیں، ان کے شوہر اور قریبی دوستوں نے انہیں بہت ہمت دلائی ارو جب انہوں نے وزن کم کیا تو مختلف ڈائٹ اور ایکسرسائز کو ملا کر ساتھ رکھا۔۔۔ ایک ڈائٹ جو انہوں نے کچھ عرصہ رکھی وہ تھی کیٹو ڈائٹ اور اس سے ان کا وزن خاصا کم ہوا تھا۔۔۔

Visit To News Source
0 0 votes
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments