بابر اعظم بمقابلہ شاہین آفریدی کے سب منتظر

پاکستان کرکٹ میں لاہور اور کراچی پرانے حریف سمجھے جاتے ہیں مگر ایچ بی ایل پاکستان سپر لیگ نے اس کی کشش میں بےانتہا اضافہ کر دیا ہے۔ اس مرتبہ روایتی حریفوں کے اس ٹکراؤ میں خاص توجہ کا مرکز دونوں ٹیموں کے کپتان ہوں گے۔

ٹی 20 کرکٹ کے دو نامور ستارے بابر اعظم اور شاہین شاہ آفریدی کا مقابلہ شائقین کرکٹ کے لیے بلے اور گیند کی حقیقی جنگ کے مترادف ہے۔

27 جنوری سے 27 فروری تک کھیلے جانے والے ایونٹ میں متوقع طور پر شائقین کرکٹ کی سب سے بڑی تعداد کراچی کنگز کے کپتان اور اوپننگ بیٹر بابراعظم اور لاہور قلندرز کے کپتان اور سٹرائیک بولر شاہین شاہ آفریدی کے مقابلے کی منتظر ہے۔

بابر اعظم قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان اور شاہین شاہ آفریدی بولنگ اٹیک کے لیڈنگ بولر بھی ہیں۔ ان دونوں کھلاڑیوں نے کیلنڈر ایئر 2021 میں پاکستان کی ٹی 20 انٹرنیشنل کرکٹ میں ریکارڈ 20 فتوحات میں اہم کردار ادا کیا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق بابر اعظم نے گذشتہ سال ٹی 20 کرکٹ میں 1779 رنز بنائے۔ وہ ٹی 20 کرکٹ میں اب تک 7471 رنز بنا چکے ہیں۔ وہ اس طرز کی کرکٹ میں 18 نصف سنچریاں اور دو سنچریاں بھی بنا چکے ہیں۔

دوسری طرف شاہین شاہ آفریدی نے گذشتہ سال 50 ٹی 20 وکٹیں حاصل کیں۔ ان کے علاوہ گذشتہ سال صرف تین بولرز ہی یہ کارنامہ انجام دے سکے تھے۔ انہوں نےکیلنڈر ایئر 2021 میں 21 کی اوسط سے 51 وکٹیں حاصل کیں۔

دونوں کھلاڑی اس سے قبل سات مرتبہ پی ایس ایل میں آمنے سامنے آچکے ہیں۔ ان سات میچز میں شاہین شاہ آفریدی کی 46 گیندوں پر بابر اعظم صرف ایک مرتبہ آؤٹ ہوئے ہیں اور  73 رنز بنائے، جس میں 12 چوکے شامل ہیں۔

دونوں حریفوں کا اس مرتبہ بھی پاؤر پلے میں ہی آمنا سامنا متوقع ہے، جہاں شاہین شاہ آفریدی کی اکانومی 6.66 اور بابر اعظم کے رنز بنانے کی اوسط 77.42 کی ہے۔

دونوں ٹیمیں ایچ بی ایل پی ایس ایل 7 میں 30 جنوری کو نیشنل سٹیڈیم کراچی اور 18 فروری کو قذافی سٹیڈیم لاہور میں مدمقابل آئیں گی۔ اب تک کھیلے گئے 13 مقابلوں میں لاہور قلندرز نے صرف پانچ میں کامیابی حاصل کی ہے۔

کراچی کنگز کے کپتان بابر اعظم کا کہنا ہے کہ ایچ بی ایل پی ایس ایل نے قومی کھلاڑیوں کی ترقی میں غیر معمولی کردار ادا کیا ہے اور پی ایس ایل میں کھیلی جانے والی مسابقتی کرکٹ سے ان کے اپنے کھیل میں نکھار پیدا ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کسی بھی بیٹر کے لیے شاہین شاہ آفریدی کا سامنا کرنا آسان نہیں ہے کیونکہ وہ اپنی تیز رفتار بولنگ سے بیٹر کے لیے مشکلات پیدا کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں۔ ان میں سیکھنے کی لگن ہے اور حالیہ چند سالوں میں ان کے کھیل میں نمایاں بہتری واضح ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ شاہین شاہ آفریدی کا مقابلہ کرنے کے لیے منتظر ہیں۔ امید ہے کہ شائقینِ کرکٹ کو ایک دلچسپ اور سنسنی خیز مقابلہ دیکھنے کو ملے گا۔

لاہور قلندرز کے کپتان شاہین شاہ آفریدی کا کہنا ہے کہ پی ایس ایل ان سمیت کئی  فاسٹ بولرز کے لیے ایک لانچنگ پیڈ کی حیثیت رکھتی ہے۔ یہاں  کھیلی جانے والی مسابقتی کرکٹ سے بین الاقوامی کرکٹ کی تیاری میں بھرپور مدد ملتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ دبئی میں کھیلے گئے پی ایس ایل کے ایک میچ میں ملتان سلطانز کے خلاف ان کی چار رنز کے عوض پانچ کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھانے والی کارکردگی نے ان میں خود اعتمادی پیدا کی۔

شاہین شاہ آفریدی نے کہا کہ بابر اعظم  ایک باصلاحیت بیٹر ہیں اور ان کی مضبوط تکنیک کی وجہ سے انہیں بولنگ کرنا کسی امتحان سے کم نہیں  ہوتا۔ وہ  کبھی بھی گیند کو باؤنڈری لائن کے باہر پھینک کر بولر کے منصوبے کو خاک میں ملا دیتے ہیں۔

انہیں امید ہے کہ ان کا  بابراعظم کا یہ مقابلہ لاہور اور کراچی کی عوام کے لیے ایک دلچسپ میچ ہوگا، جس سے وہ بہت لطف اندوز ہوں گے۔

کراچی کنگز:

بابراعظم (کپتان)، کرس جارڈن، عماد وسیم، لوئس گریگوری، محمد نبی، محمد عامر، عامر یامین، جوئے کلارک، شرجیل خان، عمید آصف، ٹام ایبل/این کاک بین، روحیل نذیر، محمد عمران، محمد الیاس، فیصل اکرم ، قاسم اکرم / محمد طحہ ، طلحہ احسن ، روماریو شیفرڈ ، صاحبزادہ فرحان،  جارڈن تھامسن

لاہور قلندرز:

شاہین شاہ آفریدی(کپتان)، فخر زمان، راشد خان، محمد حفیظ، ڈیوڈ  ویزے، حارث رؤف، عبداللہ شفیق، فل سالٹ/بین ڈنک، ہیری بروک، کامران غلام، ڈین فاکس کرافٹ، سہیل اختر، ذیشان اشرف، احمد ذیشان، احمدخان، معاذ خان، سمت پٹیل، سید فریدون، عمران رندھاوا اور عاکف جاوید۔

Visit To News Source
0 0 votes
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments