منگیتر نے اس وقت تک کمرے میں بند رکھا جب تک— مختلف ممالک کے قومی ترانے اور ان کے پیچھے چھپی چند حیرت انگیز ان کہی کہانیاں

دنیا بھر کے ممالک میں قومی ترانے اور جھنڈے کے حوالے سے ملک کی عوام میں ایک خاص جذباتیت پائی جاتی ہے- تاریخ گواہ ہے کہ مختلف ممالک کے متعدد شہری اپنے ملک کے ترانے یا جھنڈے کی تعظیم میں اپنی جانیں تک قربان کر چکے ہیں- دنیا بھر میں قومی ترانے کے پیچھے کچھ حیرت انگیز ان کہی کہانیاں ہیں جو یقیناً پڑھنے کے لائق ہیں۔ آج کے آرٹیکل میں ہم آپ کو چند ممالک کے قومی ترانوں پیچھے چھپی حیرت انگیز کہانیاں ہی سنائیں گے- میکسیکوسن 1853 میں، میکسیکو کے صدر نے قومی ترانہ لکھنے مقابلہ کا اعلان کیا اور منتخب ہونے والے ترانے کے مطابق ہی اس کی قومی دھن کا انتخاب بھی کیا جانا تھا۔ اس وقت Francicso González Bocanegra نامی شاعر کو اس کی منگیتر نے اس مقابلے میں حصہ لینے کے لیے کہا لیکن فرانسسکو نے انکار کر دیا- جس پر منگیتر نے اسے کمرے میں اس وقت تک بند رکھا جب تک فرانسسکو کا ذہن تبدیل نہیں ہوگیا- فرانسسکو نے 10 اشعار پر مشتمل ترانہ لکھا اور وہی میکسیکو کو قومی ترانہ منتخب ہوگیا-

 چیک ری پبلک اور سلواکیہچیک سلواکیہ 1918 میں وجود میں آیا تھا اور اس وقت ترانہ چیک اوپیرا اور سلوواک کے ایک لوک گیت کے اشعار پر مشتمل تھا۔ جب چیکو سلواکیہ تحلیل ہوا تو ترانہ بھی تقسیم ہوگیا۔ پہلے دو اشعار جمہوریہ چیک کے پاس چلے گئے جبکہ باقی دو اشعار سلو واکیہ میں شامل ہوگئے۔

 یوگینڈادنیا کے مختصر ترین ترانوں میں سے ایک ترانہ یوگینڈا کا ہے- اور عام طور پر اس ترانے کو دو بار پڑھا جاتا ہے-

 کوسٹا ریکا19ویں صدی کے وسط میں کوسٹا ریکا کے صدر نے کیپٹن Manuel Maria Gutierrez کو ملک کا قومی ترانہ تخلیق کرنے کا حکم دیا- آغاز میں کیپٹن نے صدر کا یہ حکم ماننے سے انکار کردیا جس پر صدر نے انہیں جیل بجھوا دیا- جس کے بعد کیپٹن نے قید کے دوران ہی ملک کا قومی ترانہ تخلیق کیا-

 یونانیونان کی تاریخ بہت لمبی ہے لیکن اس کا ترانہ اس سے بھی لمبا ہے- یونان کا ترانہ Dionysios Solomos نے تخلیق کیا جس میں 158 مصرعے شامل ہیں-

 جاپانجاپان کا ترانہ Kimigayo دنیا کا قدیم ترین قومی ترانہ ہے- اس کی دھن 794 سے 1185 عیسوی کے دور سے تعلق رکھتی ہے- ہزاروں سال گزرنے کے باوجود آج بھی یہ ملک کا قابل فخر ترانہ ہے-

 پاکستانپاکستان کا قومی ترانہ مشہور شاعر حفیظ جالندھری نے لکھا- یہ پورا ترانہ فارسی زبان میں ہے اور اس میں صرف ایک لفظ “کا“ اردو زبان سے لیا گیا ہے- قومی ترانے میں 21 میوزک آلات اور 38 مختلف ٹونز کا استعمال کیا گیا ہے۔ اس ترانے کا دورانیہ 80 سیکنڈ پر مشتمل ہے- اس ترانے کا میوزک احمد غلام علی چھاگلہ نے کمپوز کیا تھا-

W3Schools.com
0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments