ہوا کو سانس کے لئے مفید بنانے والا فیس ماسک تیار

’سپرماسک‘ میں جہاں پنکھےنصب ہیں،وہیں اس میں بلیوٹوتھ،ہیڈفون اورمائیکروفون کی سہولت بھی ہے

ہوا کو سانس کے لئے مفید بنانے والا فیس ماسک تیار،دنیا کا مہنگا ترین الیکٹرک فیس ماسک مارکیٹ میں آگیا،دسمبر 2019 میں چین سےشروع ہونےوالی کورونا کی وبا کےبعد دنیا بھرمیں سال 2020 کےآغازمیں جہاں وینی لیٹرزکی قلت دیکھی گئی تھی، وہیں معمولی سےفیس ماسک بھی نایاب ہوگئےتھے۔ بعد ازاں 2020 کےآغاز میں کاریں،جہازاورکمپیوٹروموبائل بنانےوالی کمپنیاں بھی وینٹی لیٹرزاورفیس ماسک بنانےمیں مصروف ہوگئی تھیں۔ وبا کےبعد جہاں فیس ماسک کی اہمیت بڑھی،وہیں دنیا کی معروف کمپنیوں اوربرانڈزنےبھی دیدہ زیب،اسمارٹ اورمہنگےترین فیس ماسک متعارف کرائے۔

گرچہ پہلےہی ایل جی سمیت دیگرٹیکنالوجی کمپنیاں اسمارٹ فیس ماسک متعارف کراچکی ہیں،جن میں نہ صرف ایل ای ڈی لائٹس ہیں بلکہ وہ چارجنگ پربھی چلتےہیں۔ ایسےہی اب امریکی ریپرولیم ایڈمس المعروف ولیم آئی ایم نےامریکی کمپنی ہنی ویل اورہولی وڈ سائنس فکشن کرداروں اسپائیڈرمین اوربیٹ مین کےلباس تیارکرنےوالےڈیزائنرجوزفرنانڈزکےساتھ مل کرایک منفرد فیس ماسک متعارف کرادیا۔

خاص بات یہ ہےکہ اس میں تین پنکھےاورایسےڈیجیٹل فلٹرزنصب ہیں جو ہواکوسانس کےلیےصاف بنانےمیں مددگاربناتےہیں۔’سپرماسک‘ میں جہاں پنکھےنصب ہیں،وہیں اس میں بلیوٹوتھ،ہیڈفون اورمائیکروفون کی سہولت بھی ہےاورماسک کےتمام فیچرزبیٹری کی مدد سےکام کرتےہیں۔ ’سپرماسک‘ کی بیٹری 7 گھنٹےتک کام کرتی ہےاوراس میں ہواکوصاف بنانےوالےفلٹرزکو 30 دن بعد تبدیل بھی کیا جا سکتا ہے۔

’سپرماسک‘ کی رقم 300 امریکی ڈالریعنی پاکستانی 50 ہزارروپےکےقریب تک رکھی گئی ہےاوراسےابتدائی طورپرآن لائن فروخت کےلیے پیش کیا گیا ہے۔ ’سپرماسک‘ کوپیش کیےجانےپرامریکا میں رعایتی سیل بھی متعارف کرائی گئی ہےاوراسےکمپی کی ویب سائٹ سےخریدنے پر 80 ڈالرتک کی رعایت حاصل کی جا سکتی ہے۔ ’سپرماسک‘ کوپیش کیےجانےکےبعد امریکی سوشل میڈیا پراس پرکافی چرچےکیے جا رہےہیں اورکئی لوگ اس پرمزاحیہ تبصرے بھی کررہےہیں۔

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments