عجیب سی خوفناک آوازیں آنے لگیں اور پھر لائٹ چلی گئی۔۔۔ کراچی کی مشہور جگہ کے کچھ ایسے حصے جہاں جن بھوت پائے جاتے ہیں

  • ونیورسٹی ٹائم کو عموماً ” گولڈن ٹائم” کہا جاتا ہے کیونکہ اسکول کے بعد یونیورسٹی ایک ایسی جگہ ہوتی ہے جہاں ہر شخص کی ذہنی و جسمانی تربیت اس انداز میں ہوتی ہے کہ زندگی بھر انسان اسی سانچے میں ڈھل جاتا ہے۔ کراچی یونیورسٹی میں جہاں ہر قسم کی فیلکٹی موجود ہے اور لاکھوں طلبہ و طالبات تعلیم حاصل کرتے ہیں وہیں بچوں میں جامعہ سے متعلق ایک ڈر بھی پایا جاتا ہے جس کی وجہ سے اکثر طلبہ و طالبات یا تو من گھڑت بھوتوں کی کہانیاں بتاتے نظر آتے ہیں یا پھر اندھیرے سے ڈر کر کسی خوف کو دل میں بٹھا لیتے ہیں اور دوسروں کو بھی ڈراتے ہیں۔ آپ بھی جانیئے آخر وہ کونسی جگہیں ہیں جامعہ کراچی میں جہاں بھوتوں کا سایہ ہے؛

جگہیں اور بھوت:

٭ فارمیسی کے باہر درخت:

جامعہ کراچی میں فارمیسی ڈپارٹمنٹ کے باہر موجود ایک درخت صدیوں سے موجود ہے اور اس کی جڑیں بھی بہت گہری ہیں، اس درخت سے متعلق متعدد مرتبہ درجنوں لوگوں نے کسی جن کے سائے سے متعلق شکایات کی ہیں، البتہ جامعہ کے کچھ ملازمین ایسے ہیں جنہوں نے خفیہ طور پر کبھی یہ بات کہی تھی کہ ایک سفید رنگ کے لباس میں ملبوس خاتون ہے جو اکثر یہاں رات کے وقت لوگوں کو نظر آتی ہے، اب یہ بات کس حد تک سچ ہے یہ تو خدا بہتر جانتا ہے مگر درخت کے نیچے اندھیرے میں کھڑے نہ ہوں کیا پتہ واقعی حقیقت ہو۔۔۔۔

٭ ماس کمیونیکیشن ڈپارٹمنٹ:

جامعہ کا ماس کمیونیکشن کا ڈپارٹمنٹ اتنا اندر جا کر ہے اور جس جگہ واقعہ ہے اس کے اطراف میں جنگل اور درخت بہت زیادہ ہیں، اس ڈپارٹمنٹ کے پہلے فلور اور کچھ مخصوص جماعتوں سے بھی کئی آوازیں یا آہٹیں بچوں کو محسوس ہوتی ہیں جس سے کسی غیر انسان کی موجودگی ظاہر ہوتی ہے جبکہ کچھ واش روم تو مستقل بند ہی تھے جن کو کچھ وقت پہلے ہی کھولا گیا مگر مغرب کے بعد وہاں خوف اور سناٹا کسی کی آہٹ کا ڈر دل میں ڈال دیتا ہے۔ ایک طالبہ کے مطابق: ایک روز ہم پہلے فلور لے واش روم میں موجود تھے جہاں کے کئی دروازے مکمل لاک تھے، کوئی اندر نہیں جاسکتا تھا، مگر اچانک وہاں سے کچھ سرگوشیوں کی آوازیں آتی، کبھی دروازے زور سے کھلتے تو کبھی بند ہوتے، کبھی کسی کی چیخ کی کہ آواز آتی اور ایک دن ایسا آیا کہ دروازے زور سے بند ہو رہے تھے اچانک لائٹ چلی گئی باہر جانے کا راستہ نہیں مل رہا اور کچھ وقت بعد جب لائٹ آئی تو زمین پر کسی کے بڑے قدموں کے نشانات دکھائی دیئے۔۔ ایسی باتیں سنی ضرور ہیں لیکن حقیقت انسانوں سے زیادہ خدا بہتر جانتا ہے۔

٭ ویویزول اسٹڈیز ڈپارٹمنٹ:

ویزول اسٹڈیز ڈیپارٹمنٹ کے نیچے موجود آر سی کینٹین سے وی ایس جاتے ہوئے راستہ سنسان ہے اور درختوں کے بیچ ہے اس جگہ بھی کئی ڈراؤنے حادثات نے بچوں کو خوب ڈرایا ہوا ہے۔

٭ فُٹ بال گراؤنڈ:

فُٹ بال گراؤنڈ کے قریب سے بھی اکثر اس قسم کی غیر انسانی آوازوں اور سائے سے متعلق شکایات موصول ہوتی رہی ہیں مگر کیا سچ ہے یہ اللہ بہتر جانتا ہے۔

٭ جیالوجی ڈیپارٹمنٹ:

جامعہ کراچی کے جیولوجی ڈیپارٹمنٹ سے بھی مغرب کے بعد گزرنا مشکل ہوتا ہے کیونکہ وہاں بھی اکثر بچوں سے سنا گیا ہے کہ چیزیں ادھر سے ادھر کھو گئی ہیں، کسی نے باتھ روم کا دروازہ لاک کردیا جبکہ وہاں لاک بھی موجود نہیں ہیں۔

٭ سوشیالوجی:

سوشیالوجی ڈیپارٹمنٹ میں بھی اکثر عجیب وغریب قسم کی آوازوں کی شکایت سُنی جاتی ہیں، مگر سچ خدا کی ذات جانتی ہے۔

0 0 vote
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments