اور فرانس فتح ہو گیا۔۔

تحریر-ذیشان نور خلجی مشاہدے میں آیا ہے کہ دنیا میں دو ممالک ایسے بھی ہیں جن کے نام ایک سے ہیں اور وہ ہیں فرانس۔ جی ہاں، اور دونوں ممالک میں فرق صرف اتنا ہے کہ ایک کے دارالحکومت کا نام پیرس ہے جب کہ دوسرے کے دارالحکومت کا نام فیض عام ہے۔ اس کے مزید پڑھیں

علیشاء کیس میں وزیراعظم چھا گئے

تحریر–ذیشان نور خلجی وزیراعظم ہو تو ایسا۔ سچ کہوں تو علیشاء زیادتی کیس میں وزیر اعظم نے معاملات اپنے ہاتھوں میں لے کر مخالفین کے دانت ہی توڑ دئیے ہیں۔ ساری اپوزیشن اور عوام میں چھپے حکومت مخالف لوگ، وزیر اعظم کے اس اقدام پر منہ کے بل جا گرے ہیں۔ کسی نے کیا خوب مزید پڑھیں

مقدس اوراق کا ادب

ذیشان نور خلجی ان کا نام سہیل عطاری تھا۔ کوئی ڈیڑھ برس قبل ان سے ملاقات ہوئی۔ ہوا کچھ یوں کہ گلی کی نکڑ پہ جہاں کبھی لال رنگ کا لیٹر بکس ٹنگا ہوتا تھا، اس کی جگہ ایک سیاہ کنستر نے لے لی۔ کبھی کبھار میرا ادھر سے گزر ہوتا تو سوچتا کہ آخر مزید پڑھیں

مقتول، قاتل اور حواری

تحریر-ذیشان نور خلجی اس وقت تین کردار ہمارے سامنے ہیں۔ ایک بنک کا مقتول مینجر، دوسرا قاتل سیکورٹی گارڈ اور تیسرا وہ لوگ جو جلوس کی صورت میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے اس قاتل کو تھانے لے کر گئے یا وہ مولوی جو پولیس اسٹیشن کی چھت سے شرکاء کو لیڈ کرتے رہے۔ اس مزید پڑھیں

“میرے پُھل رُل جان گے”

تحریر -ذیشان نور خلجی ان دنوں طبیعت کچھ بے چین سی ہو چلی ہے۔ ہر چیز سے جان چھڑانے کو جی چاہتا ہے۔ بے سمت بھاگ رہا ہوں، نہ تو کوئی منزل نظر آتی ہے اور نہ ہی کوئی کنارہ ہاتھ لگتا ہے۔ دراصل اندر کی سچائیاں اس قدر گھناؤنی ہو چکی ہیں کہ باہری مزید پڑھیں

یوم حرمت رسول ﷺ

تحریر-ذیشان نور خلجی سیدھی سی بات ہے ہم ان سے جنگ تو لڑ نہیں سکتے لیکن اس کا مطلب یہ بھی نہیں کہ پھر آپس میں ہی لڑنا شروع کر دیں۔ جونہی فرانسیسی صدر کا بیان سامنے آیا ہم نے توپوں کے رخ اپنے ہی لوگوں کی طرف موڑ لئے۔ اب ایک طبقہ ہے جو مزید پڑھیں

اپوزیشن کے میلے اور حکومت کے حیلے

تحریر-ذیشان نور خلجی پہلی بات تو یہ ہے کہ حکومت کہیں نہیں جانے والی اس لئے ہر دو طرف کے کارکنان منہ لپیٹے پڑے رہیں۔ جب کہ دوسری اور مزے کی بات یہ ہے کہ اپوزیشن کی بھی کوئی خواہش نہیں کہ حکومت کو گھر بھیجا جائے۔ بھلا کون جلا ہوا کمبل عمران خان کی مزید پڑھیں

مسلکی منافرت کی آگ

تحریر ذیشان نور خلجی وہی ہوا جس کا ڈر تھا، لعنتیں سمیٹنے چلے تھے اور بات اب لاشیں اٹھانے پر آ پہنچی ہے۔ دل چاہتا ہے آپ لوگوں سے کہوں کہ دعا کریں اللہ ہمیں خیر و عافیت سے رکھے لیکن کیا ہے کہ وقت اب دوا کا ہے نہ کہ صرف دعا کا۔ ہم مزید پڑھیں

ٹک ٹاک پر پابندی

تحریر ذیشان نور خلجی یہی کوئی پندرہ برس گزر چکے، ہمارے ایک انکل ہوا کرتے تھے۔ عمر عزیز کی ساٹھ بہاریں دیکھ رکھی تھیں سو انتہائی پرہیز گار اور صوم و صلوٰۃ کے پابند تھے۔ مگر ریسلنگ دیکھنے کا انہیں جنون کی حد تک شوق تھا۔یہ ان دنوں کی بات ہے جب ڈبلیو ڈبلیو ایف مزید پڑھیں

ہمارے نکمے والے مولوی

تحریر ذیشان نور خلجی ادھر ہمارے پاس ہی ایک گھرانہ ہے کبھی وہ بڑی آزاد خیال فیملی تھی۔ جدید فیشن کو اپنائے ہوئے ماڈرن قسم کے لوگ۔ رقص و سرود کی محافل ان کے ہاں عام سجا کرتی تھیں۔ پھر جب مولانا طارق جمیل کی وجہ سے تبلیغی جماعت کا سافٹ امیج ابھرا تو یہ مزید پڑھیں