اپنے پیاروں کی خاطر

تحریر. ذیشان نور خلجی تئیس اپریل بروز جمعہآج موسم بہت سہانا ہے رات بھر ہونے والی بارش کے باعث فضاء میں قدرے خنکی ہے۔ میں صبح تیار ہو کر خوشگوار موڈ میں گھر سے نکلا ہوں اور گاڑی میں بیٹھتے ہی ہاتھوں کو سینیٹائز کر لیا ہے ماسک بھی پہن رکھا ہے لیکن آفس پہنچ مزید پڑھیں

فسادی گروہ

تحریر. ذیشان نور خلجی پہلا سوال یہ ہے کہ ان میں سے عاشق رسول کون ہے اور فسادی کون ہے۔ تو جواب یہی ہے کہ مار دھاڑ کرنے والا گروہ ہی عاشق رسول ہے۔بارہ اپریل بروز سوموار ایک حاملہ خاتون کو طبیعت بگڑنے کے باعث رکشے میں بٹھا کر ہسپتال لے جایا جاتا ہے۔ قریبی مزید پڑھیں

“چاند کی گود میں”

تحریر. ذیشان نور خلجی وقت کی ان گھڑیوں میں جب کبھی میں دنیا کا امیر ترین شخص ہوتا ہوں یعنی اپنی من مرضی سے اور پورے اطمینان و سکون کے ساتھ خریداری کرنے کی صلاحیت رکھتا ہوں تو میری نظر انتخاب اکثر و بیشتر ایک کتاب پر ہی ٹھہرتی ہے اور پھر اس کتاب کو مزید پڑھیں

کتاب کو کیسے شائع کیا جائے

تحریر. ذیشان نور خلجی اداسیوں کا شاعر زین شکیل پوچھنے لگا کام کاج کا سناؤ، کیسا جا رہا ہے؟ عرض کیا اللہ کا شکر ہے، بہت اچھا۔ لہجے میں حیرانی سموئے ہوئے پوچھنے لگا، ویسے کر کیا رہے ہو؟ معصومیت سے کہا، کچھ بھی نہیں۔ پس دوستو ! کچھ اسی طرح کی مصروفیات آڑے آ مزید پڑھیں

عورت کو عزت دو

تحریر. ذیشان نور خلجی ” میرا جسم میری مرضی” اپنی فطرت میں ایک خوبصورت نعرہ تھا یعنی جس کا جسم ہے مرضی بھی صرف اسی کی چلے گی، یہ نہیں ہو گا کہ ایک لڑکی پبلک ٹرانسپورٹ میں سفر کر رہی ہے اور بس کنڈیکٹر کرایہ وصولتے ہوئے اس کے ہاتھوں کو مس کر کے مزید پڑھیں

“دھرتی جائے، کیوں پرائے”

تحریر. ذیشان نور خلجی اللہ جانے اس کا اصل نام کیا ہے لیکن میں اسے اچھو چوہڑھے کے نام سے ہی جانتا ہوں۔ بلکہ سمجھتا ہوں کہ یہ اس قابل ہے بھی نہیں کہ اس کا اصل نام جانا جائے یا اسے عزت سے مخاطب کیا جائے۔ دراصل یہ ایک گٹر صاف کرنے والا بھنگی مزید پڑھیں

“فرشتے کے بھیس میں چھپا ہوا شیطان”

تحریر. ذیشان نور خلجی یہ کہانی ایک ایسے غریب بچے کی ہے جس کی بہن ایک شیعہ جاگیردار کے پوتوں کی ہوس کا نشانہ بنتی ہے لیکن اس کی پولیس میں داد رسی نہیں ہوتی۔ پھر اس کے زخموں پر مرہم رکھنے کو ایک دوسرے مسلک کے مولوی صاحب برآمد ہوتے ہیں جو اپنی بیٹی مزید پڑھیں

انچاس فیصد پاکستانی، سازشی نظریات کے حامی

تحریر. ذیشان نور خلجی گیلپ سروے رپورٹ کے مطابق پاکستان کے 49 فیصد عوام کورونا ویکسین نہیں لگوانا چاہتے کیوں کہ یہ لوگ آج بھی کورونا وائرس کو ایک سازش ہی سمجھتے ہیں۔ مجھے تو یہ سمجھ نہیں آتی، کورونا وائرس اگر ایک سازش تھی تو پھر اس کا سب سے زیادہ نشانہ بھی کافر مزید پڑھیں

ٹیلی گرام اور بابا جی

تحریر. ذیشان نور خلجی سوچا تھا دوست احباب کو ایک اطلاعی میسج بھیجوں گا کہ پرائیویسی پالیسی کی وجہ سے ٹیلی گرام میسنجر پر منتقل ہو چکا ہوں، سو وٹس ایپ پہ رابطہ نہ کیا کریں۔ لیکن اس سے پہلے ہی ٹیلی گرام والوں نے کچھ ایسا سبق سکھایا کہ آنکھیں کھل گئیں۔ہوا یوں کہ مزید پڑھیں

توہین رسالت، ایاز نظامی اور مذہبی طبقہ

تحریر ذیشان نور خلجی ایاز نظامی کیس کا فیصلہ آنے کے بعد ایک سوشل میڈیا پلیٹ فارم سے، دین بیزار طبقے سے متعلق اپنی رائے دی تھی اور اس کا مقصد صرف اور صرف توازن قائم رکھنا تھا ورنہ تب بھی منشاء یہی تھی کہ اہل مذہب سے متعلق بات کی جائے۔ کیوں کہ ہمارے مزید پڑھیں