اشرافیہ اور عوام

تحریر : پروفیسر رفعت مظہر ہم نے ہمیشہ لکھا کہ صحافت سیادت ہے شرط مگر یہ کہ اِس میں کھنکتے سکّوں کی ملاوٹ نہ ہو۔ لیکن آجکل میڈیا کا دامن اتنا وسیع ہو چکا کہ اِس میں ”لفافہ صحافیوں” اور زرد صحافت کی گنجائش بدرجۂ اتم موجود۔ لگ بھگ تین عشرے پہلے تک شام کے مزید پڑھیں

پہنچی وہیں پہ خاک

تحریر : پروفیسر رفعت مظہر پوری دنیا میں پارلیمانی روایت یہی ہے کہ اپوزیشن سوال اُٹھاتی اور احتجاج کرتی ہے۔ اِس کے برعکس حکومت نہ صرف صبروتحمل کا مظاہرہ کرتی ہے بلکہ اپوزیشن کے نخرے بھی اُٹھاتی ہے۔ تحریکِ انصاف کی حکومت شائد ابھی تک کنٹینر سے نیچے نہیں اُتر سکی کیونکہ جو کام اپوزیشن مزید پڑھیں

اپنا گھر ٹھیک کریں

تحریر : پروفیسر رفعت مظہر بالکل بجا فرمایا چیف آف آرمی سٹاف قمر جاوید باجوہ نے کہ ہمیں اپنا گھر ٹھیک کرنا ہوگا۔ اِس ایک مختصر سے جملے میں معانی کے جہاں آباد ہیں۔ حقیقت یہی کہ اگر اِیک گھر کے افراد باہم جوتم پیزار ہوں اور ہر کسی کی ”اپنی اپنی ڈفلی اور اپنا مزید پڑھیں

حکمرانوں کا لولی پاپ

تحریر : پروفیسر رفعت مظہر تحریکِ انصاف کا جنم اکتوبر 2011ء میں مینارِ پاکستان کے کامیاب جلسے سے ہوا۔ اِس سے پہلے تو خاںصاحب کی قومی اسمبلی میں اکلوتی سیٹ تھی اور پورے پاکستان سے تحریکِ انصاف کو لگ بھگ ڈیڑھ لاکھ ووٹ ملے۔ جلسے سے پہلے شیخ رشید کی عوامی لیگ کی طرح تحریکِ مزید پڑھیں

پیش کر غافل، عمل کوئی اگر دفتر میں ہے

تحریر : پروفیسر رفعت مظہر کپتان کی 22 سالہ جدوجہد رنگ لا رہی ہے اور تبدیلی کے واضح آثار نظر آنا شروع ہو گئے ہیں جس کا بیّن ثبوت ڈسکہ میں قومی اسمبلی کا ضمنی انتخاب ہے۔ قصہ کچھ یوں ہے کہ ڈسکہ میں کچھ نامعلوم افراد سارا دن مختلف پولنگ سٹیشنز پر فائرنگ کرتے مزید پڑھیں